SUBMIT A COMPLAINT

PTCLcomplaint against ptcl

Review updated:

To whom it may concern
=

1)- today dated 02-01-2015, one lineman of ptcl came from sadiqabad exchange for attending my phone complaint but I dont want to restore my phone till the initiating of taking drastic action against ptcl irresponsible officers.
2)- because he had disconnected my phone connection for two month in september 2014 and october 2014 in spite of paying my double payment of the phone bills
3)- now ptcl has again disconnected my phone since 2nd week of december 2014

4)- hence please don’t restore my phone connection till terminations of service of concern ptcl irresponsible officers & the complaint clerk of ptcl complaint office who had kept my complaint in pending for more than two week.
5)- I will get restore my phone connection after the revealing of aazab of allah upon all concerned cruel officers of ptcl who have given me most severe tension and mental worries to one 75 years old aged consumer of ptcl who is also a serious patient of heart, ashtama, sugar, backbone pain

6)- similarly your three ptcl officers of phone nos [protected] (time 11-15 am), 2)_[protected] (time 11-43) & [protected] (time 12-01pm)
Have discussed this most serious matter with me but I am not willing to restore my phone connection till the termination of services of concerned irresponsible officers of ptcl and also waiting the revealing of aazab of allah upon concerned cruel officers of ptcl who have given me severe tension and mental worries to me.
yours most affected consumer

raja ghazanfar ali khan adowaliya
ma political science.
press essay writer,
jouse-5, street-10, iqbal town, rawalpindi-46300
emai, rgakhan. [protected]@gmail. coml
Date 02-02-2015
=
Copies to
1)- director general ispr rawalpindi.
2)- director general (g&w) pm sectt (public) isd
3)_ federal minister of telecommunication isd
4)- director general, fia, isd
5)- federal minister of law, justice & h/rights

Sort by: UpDate | Rating

Comments

  •   Jan 19, 2015

    net problim hai

    0 Votes
  • Sa
      Apr 17, 2015

    LETTERS TO THE EDITOR
    ========================

    BELIEVE IT OR NOT
    ---------------------------
    I want to draw the kind attention of Prime Minister of Pakistan through your esteemed newspapers that most of officers and Heads of all Government Departments are become so TAKABER PASAND and cruel that they are not redressing the genuine complaints of the people of this Islamic country of Pakistan and they are giving so much severe tensions and mental worries that most of the complainants have faced severe heart attack on account of adopting a rude policy in throwing the genuine complaints of rhe peoples of Pakistan in dust bin (RADI BASKET) in order to defame and fail the most popular government of Pakistan of Muslim League (N).

    Here I want to state one most serious incident in the knowledge of the Prime Minister of Pakistan for taking drastic action against Chairman PTCL in order to set right the working position of PTCL and others such departments.

    Believe it or not but it is a fact that there is living one 75 years old aged most honest and most patriotic person in this Islamic country of Pakistan ( Name is in secret) who is also a most serious patient of Heart. Sugar and Ashtama .
    He is paying his phone bill regulearly every month but believe it or not, his phone connection is still disconnected since 11 September 2014 because the amount of the paid Bills of Phone has been gulped by FRAUDY NADRA Kiosks Choudary Stationers Sher ahmed Road Iqbal Town Rawalpindi. However he has again paid the same Bills . But in spite of this, his connection was remained disconnected for two months in spite of paying double payment of Phone Bills. At last, his connection was then restored after two months for a few days only on 27-10-2014 but it was again become out of order because of noisy tones and it was again
    disconnecterd by PTCL without any reason. Although he has lodged many Nos of complaints to PTCL but PTCL has not attended his complaint promtly However, the PTCL lineman has come after two months on [protected] to attend his complaint but he ( phone subscriber) has refused to get restored his phone connection till the initiating of taking drastic action by CHAIRMAN PTCL against the Divisional Engineer phone concerned who is irresponsible officers at fault but Chairman PTCL has not taken any action so far against his most TAKABER PASAND, cruel and irresponsible concerned officers DIVISIONAL ENGINEER (PHONE) of PTCL who has given a severe tension and mental worries to that 75 Years old aged citizen of Pakistan.

    Because the Chairman PTCL is not fearing from the AAZAB of the ALLAH which he will be faced very soon in his grave very soon after his death by the BUD DUHA given by that old aged citizen and it is also a real fact that ALLAH always hears his BUD DUHA and
    ALLAH will soon reveals the AZZAB upon cruel officers of PTCL because he is a true citizen of Pakistan .

    It was so serious complaint that a serious Heart Attack was occurred to him on the next day (Following Day) on [protected] and that 75 years old aged person remained under Medical Treatment for five Days in Rawalpindi Institute of Cardiology RAWALPINDI and his operation of ANGIOGRAPHY is recently done by cardiologist in order to save his life. He is still in bed

    Now our muslim officers ie Chairman PTCL and his all concerned officers of PTCL are feeling happy by doing cruelity upon one 75 years old-aged citizen of pakistan.

    Similarly, the chairman Nadra has not taken serious action against owner of Nadra Kiosk who has gulped the amount of paid bills of PHONE

    I will request to Prime Minister of Pakistan that the service of both chairman of PTCL and Nadra may kindly be terminated in the best interest Pakistan.

    Similarly, the consumer is still not willing to get restore the phone connection till the termination of both chairman of PTCL & NADRA or till the revealing of aazab by ALLAH upon both cruel chairman of PTCL and Nadra

    I hope that our Muslim league government will surely
    take the stern action against both responsible chairman of PTC and Nadra and wil terminate their service in the best interest of pakistan and will l set right the most worst working position of working position of both departments ie PTCL and NADRA..


    Writen By
    BEGUM SARWAR GHAZANFAR
    HOUSE-5, STREET-10, IQBAL TOWN, RAWALPINDI-46300
    EMAILS, sarwarbegum.[protected]@gmail.com

    DATE17-04-2015
    =============================

    0 Votes
  • =========================
    Reply
    RAJA GHAZANFAR ALI KHAN ADOWALIYA says:
    August 29, 2015 at 3:20 pm

    بخدمت جناب چیرمین صاحب
    پی ٹی سی ایل اسلام آباد

    بابت ، ظلم کی انتہا،
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔
    جناب اعلٰی
    اگر ہمارے اس اسلامی ملک پاکستان میں نیچ خاندان کے گھٹیا ترین ،کم تعلیم یافتہ اور نا اہل افسران بھرتی ہو جائیں تو اس اسلامی ملک پاکستان کے تمام سرکاری دفاترز کا دفتری نظام بے حد بگڑ جاتا ہے کسی آدمی کا ایک معمولی سا جائز کام بالکل نہیں ہو سکتا ہے کیونکہ نیچ خاندان کے افسران دوسرون پر ظلم کر کے بے خوش ہوتے ہیں حتٰی کہ پی ٹی سی ایل کے صارفین کو سخت ترین ذہنی اذیت دے کر ان کے مرنے پر بھی بے حد خوش ہوتے ہیں

    جناب اعلٰی
    مگر اس طرح کی ظالمانہ حرکات کرنے والے سرکاری افسران کو اس بات کا علم نہیں ہوتا ہے کہ دوسروں پر ظلم کر کے خوش ہونے والے افسران کی کرسیاں کسی وقت بھی کسی مظلوم کی بد دعا سے ہل سکتی ہیں ان پر خداوند تعالٰی کا سخت ترین عذاب بھی نازل ہو سکتا ہے خداوند تعالٰی اس قسم کے ظالم افسران کو بہت جلد ہی اس دنیا سے اٹھا لیتا ہے اور ان ظالم افسران کا کسی وقت بھی دل کا دورہ پڑنے، گردے فیل ہونے، کینسر یرقان کی بیماری لگنے ،کوڑھ کی بیماری لگنے، دما غ کی رگ پھٹ جانے سے، فالج گر جانے سے ، قدرتی حادثات میں مرنے سے انتقال ہو جاتا ہے اور کوئی ان کا جنازہ اٹھانے والا بھی نہیں ہوتا ہے اور ان کی قبریں بھی بار بار گر جاتی ہیں

    جناب اعلٰی
    مین یہ بات اس لیے کر رہا ہوں کہ میں ایک ٧٥ سالہ ضعیف العمر شخص ہوں اور دل، دمے ،شوگر، کمر کی سخت تکلیف کی بیماری میں بھی مبتلا ہوں آپ کے نیچ خاندان کے افسران نے گذشتہ ایک سال سے میرا فون کا کنکشن غیر قانونی طور پر کاٹ رکھا ہے جب کہ میں ہر ماہ اپنے فون کا بل باقاعدگی سے ادا کر رہا ہوں

    جناب اعلٰی
    آپ نے میری شکایت پر ٤ جنوری ٢٠١٥ کو چار ماہ بعد میرا کنکشن بحال کروانے کے لیے ایک لائن مین بھیجا تھا مگر میں نے آپ کو لکھ کر دیا تھا کہ سب سے پہلے ڈویزنل انجنیر فون کے خلاف سخت ترین کارروائی کر یں اور اس کو پی ٹی سی ایل کی ملازمت سے فارغ کریں مگر آپ نے اس کے خلاف اب تک کارروائی نہیں کی ہے اور نہ ہی اس کو پی ٹی سی ایل کی ملازمت سے فارغ کیا ہے

    جناب اعلٰی
    آپ کی ظالمانہ حرکت سے مجھے دل کا دو دفعہ شدید دورہ پڑا ہے اور میں ابھی تک زیر علاج ہوں اور آپ اور آپ کے نیچ خاندان کے تمام افسران مجھ پر ظلم کر کے بہت ہی خوش ہو رہے ہیں

    جناب اعلٰی
    اگر اس اسلامی ملک پاکستان میں ایک گڈ بلڈد فیملی کا ایک اچھا مسلمان افسر ہوتا یا انگریزوں کی حکومت ہوتی یا فیلڈ مارشل ایوب خان جیسی سخت ترین مارشل لائ حکومت ہوتی ( جس میں عوامی شکایات کا جلد ازالہ نہ کرنے والے ظالم سرکاری افسران کی ننگی پیٹھوں پر کوڑے برستے تھے ) تو میرا یہ جائز مسلہ نہ صرف ایک دن کے اندر اندر حل ہو سکتا تھا بلکہ وہ افسر معافی مانگنے کے لیے میرے پاس ضرور آتا مگر اس اسلامی ملک پاکستان میں کسی بھی سرکاری محکمے میں کوئی اچھا سرکاری مسلمان افسر موجود نہیں ہے کیونکہ جب بھی اس اسلامی ملک پاکستان میں کسی مسلمان کو سرکاری افسر بنایا جاتا ہے تو وہ خدا کو اپنے مذہب اسلام کو بھول جاتا ہے بد عنوان اور ظالم بن جاتا ہے اور اور اس قسم کے ظالم افسران اپنے ہی ملک کے مسلمان لوگوں کے جائز کام بالکل نہیں کرتے ہیں

    جناب اعلٰی
    اس وقت اس اسلامی ملک پاکستان میںتیرہ ہزار سرکاری افسراں میں بمشکل صرف دس بارہ نیک ایماندار ، خوف خدا محسوس کرنے والے فرشتہ صفت نیک افسران ہوں گے جو اس ملک کے عوام کے لیے واقعی رحمت کا فرشتہ ہوتے ہیں اور اس ملک کے عوام کے جائز کام کر کے ان کی تمام شکایات دور کرتے ہیں اور نیک کام کرتے ہیں جب کہ نیچ اور گھٹیا خاندان سے تعلق رکھنے والے افسران کافی تکبر پسند اور ظالم ہوتے ہیں اور وہ اس ملک کے عوام کو سخت سے سخت ترین اذیت دے کر اور ان پر ظلم کر کے بہت ہی خوش ہوتے ہیں

    جناب اعلٰی
    انگریزی دور حکومت میں انگریز حکمران نیچ خاندان کے افراد کو کبھی بھی بھول کر اہم ترین عہدون پر افسران تعینات نہیں کرتے تھے وہ اہم عہدوں پر تعینات کرنے کے لیے ہمیشہ سات خاندان چیک کرکے اچھے خاندان کے اعلٰی تعلیم یافتہ ، ایماندار،ذہین ترین ، محب وطن، افسران کو بھرتی کرتے تھے یہی وجہ ہے کہ انگریزی دور حکومت میں کسی افسر کو یہ جرت نہیں ہوتی تھی کہ وہ سرکاری ڈاک کو ایک ہفتے تک پینڈنگ میں رکھے ۔تمام عوامی شکایات کا ازالہ فوری طور پر ہو جاتا تھا اور عوام کو فوری اور سستا انصاف جلد ہی مل جاتا تھا

    جناب اعلٰی

    مگراس اسلامی ملک پاکستان میںاس قسم کے ظالم افسران کے حد سے زیادہ بگڑے ہوئے دماغ اس وقت درست ہو جاتے ہیں جب ان ظالم افسران پر خداوند تعالٰی کا سخت ترین عذاب نازل ہوتا ہے

    جناب اعلٰی
    آپ کے پی ٹی سی ایل کے جن افسران نے ایک ٧٥ سالہ ضعیف العمر شخص پر گذشتہ ایک سال سے جو ظلم کیا ہے آپ ان کے دماغ درست کر سکتے تھے مگر آپ نے ان کے دماغ درست نہیں کیے لہذا میری بد دعا ہے کہ

    یا اللہ ، پی ٹی سی ایل کے ان ظالم افسران پر سخت ترین عذاب ضرور نازل فرما جنہوں نے گذشتہ ایک سال سے میرا فون بند کر رکھا ہے ۔

    یاللہ پی ٹی سی ایل کے ان ظالم افسران کے گھر بار بھی برباد کر دے جو مجھے سخت ترین ذہنی اذیت دیتے رہے ہیں اور خوش ہوتے رہے ہیں

    یا اللہ ، پی ٹی سی ایل کے افسران پر وہ شدید عذاب نازل فرما کہ پی ٹی سی ایل کے ان ظالم افسران کے جلد سے جلد جنازے نکلنا شروع ہو جائیں تا کہ اس ملک کے دوسرے تمام افسران کو یقین ا جائے کہ اس دنیا میں واقعی خدا موجود ہے اور ان ظالم افسران کو عبرت کا سبق حاصل ہو سکے تا کہ وہ انسان بن جائیں اور وہ آئندہ پاکستانی عوام پر ظلم کرنے سے باز آ جائیں

    پی تی سی ایل کے ظالم افسرون، میری یہ بد دعا انشاللہ ضرور پوری ہو گی

    پی ٹی سی ایل کے ظالم افسران پر انشاللہ خداوند تعالیی کا سخت ترین عذاب ضرور نازل ہونا ہے میری اس بات کی تصدیق آئندہ آنے والا وقت ضرور کرے گا

    جناب چیرمین پی ٹی سی ایل صاحب
    ۔ کاش آپ کو ایک ضعیف العمر شخص کے جائز کام کرنے کا احساس پہلے ہی ہو جا تا مگر اب میں آپ کو معاف نہیں کر سکتا ہوں کیونکہ آپ کے افسران نے مجھ پر بہت ہی ظلم کیا ہے مجھے دو دفعہ دل کا شدیددورہ پڑ چکا ہے اور میں موت کے منہ سے واپس آیا ہوں اب آپ خداوند تعالیی سے اپنے ظالمانہ اعمال کی معافی مانگیں ہو سکتا ہے کہ خداوند تعالٰی آپ لوگوں کو معاف کر دے اور آپ کو سیدھے راستے پر چلنے کی توفیق عطا فرما دے

    جناب اعلیی
    اب بھی آپ کے لیے ایک سنہری موقع ہے آپ سب سے پہلے ڈویزنل انجنیر فون کو ملازمت سے فارغ کر دیں اس کے بعد میرا کنکشن بحال کروائیں اگر آپ اس ڈویزنل انجنیر فون کو فار غ نہیں کریں گے تو پھر میری بد دعا سے خداوند ٹعالیی اس ظالم افسرڈویزنل انجنیر فون کو بہت جلد ہی اس دنیا سے اٹھا لے گا کیونکہ اگر مجھے نیچے سے انصاف نہیں ملا ہے تو پھر اوپر بھی ایک عطیم ہستی خدا وند تعالٰی کی بھی موجود ہے جو میرے ساتھ انصاف ضرور کرے گی اور ُ پی ٹی سی ایل کے ظالم افسران پر سخت ترین عذاب
    انشاللہ ضرور نازل کرے گی

    جناب اعلیی
    پی ٹی سی ایل کے ظالم اور تکبر پسند افسران اپنے پی ٹی سی ایل کے صارفین پر ظلم کرنا آسان سمجھتے ہیں مگر پی ٹی سی ایل کے ظالم افسران کبھی کبھار تصویر کا دوسرا رخ بھی دیکھ لیا کرین ۔ کیونکہ کہ آپ اپنے پی ٹی سی ایل کے ایک پچھتر سالہ ضعیف العمر شخص پر ظلم کر کے بہت ہی خوش ہو رہے ہیں

    جناب اعلیی
    مگر کیا پی ٹی سی ایل کے ظالم اور تکبر پسند افسران نےکبھی اس بات پر غور کیا ہے کہ ایک نہ ایک دن کل نفس زائقتہ الموت پی ٹی سی ایل کے ظالم اور تکبر پسند افسران کا بھی اچانک بہت جلد ہی انتقال ہو جانا ہے

    جناب اعلیی
    او ر پی ٹی سی ایل کے ظالم اور تکبر پسند افسران کے انتقال کے بعد آئندہ انے والے افسران پی ٹی سی ایل کے ظالم اور تکبر پسند افسران کے بچون پر بھی اس قسم کا ظلم کریں گے اورپی ٹی سی ایل کے ظالم اور تکبر پسند افسرانکی قبروں میں ان کی روح ضرور تڑپے گی

    جناب اعلیی
    اگر پی ٹی سی ایل کے ظالم اور تکبر پسند افسران اس اسلامی ملک پاکستان میں اچھے کام کرنے کی روایت قائم کریں گے تو آئندہ آنے والے افسران بھی ایک اچھی روایت پر ضرور عمل کریں گے اور پی ٹی سی ایل کے ظالم اور تکبر پسند افسران کے مرنے کے بعد پی ٹی سی ایل کے ظالم اور تکبر پسند افسران کے بچوں کے ساتھ اچھا سلوک ہو گا اور قبر میں پی ٹی سی ایل کے ظالم اور تکبر پسند افسران کی روحیں پے چین نہیں ہوں گی

    جناب اعلیی
    امید ہے کہ پی ٹی سی ایل کے ظالم افسران
    انسان بن جائیں گے اور وہ اپنے دفتری اوقات میں اپنے بند کمروں میں اپنے دوستوں کے ساتھ تاش نہیں کھیلیں گے کیونکہ ١٩٠٤ میں میں نے محمد اکرم ڈویزنل انجنیرفون سٹلائت تائون راولپنڈی کو اپنے دفتری اوقات میں اپنے دوستوں کے ساتھ تاش کھیتے دیکھ لیا تھا جب میں اپنے فون کنکشن کی درخواست جمع کروانے او ر تنصیب کروانے کے سلسلے مین ان سے ملا تھا ۔

    جناب اعلیی بات صاف ظاہر ہے کہ جب پی ٹی سی ایل کے ڈویزنل انجنیرفون افسران دفتری اوقات میں اپنے دوستوں کے ساتھ تاش کھیلیں گے تو پی ٹی سی ایل کے ان افسراں کے پاس صارفین کی جائز شکایا ت
    کا ازالہ کروانے مین کیا دل چسپی ہو گی اور اگر دوسری جانب حکومت کا کوئی ذمہ وار افسر اچانک دورہ کر کے ان کو چیک کرنے والا بھی موجود نہ ہو تو پی ٹی سی ایل کی کاکردگی درست ہونے کی کیا توقع کی جا سکتی ہے؟پی ٹی سی ایل کی کارکردگی کبھی بھی درست نہیں ہو گی اور یہ ہمیشہ کے لیے نہایت ہی غیر تسلی بخش ہو گی اورپی ٹی سی ایل کے صارفین کی جائز شکایات کا ازالہ سو سال تک بھی نہیں ہو گا

    اگر ہماری حکومت کے کسی ذمہ وار افسر کو میری بات کا یقین نہ آئے تو وہ پی ٹی ای ایل کو آزمانے کے لیے ایک فرضی کمپلینٹ فون پر نوٹ کروائیں اور چیک کریں کہ لائن مین کتنے دن بعد آپ کی شکایت کو اٹینڈ کرنے کے لیے آتا ہے

    اسی طرح سے پی ٹی سی ایل کے کسی افسر کو آپ ایک عدد فرضی درخواست بذریعہ رجسٹرد پوسٹ ارسال کریں اور اس کے جواب کا انتظار کریں ، اس کا سو سال گزرنے کے باوجود بھی جواب نہیں آئے گا
    زوالفقار علی بھٹو نے تیرہ سو بد عنوان اور نا اہل افسران کو جب فارغ کیا تھا تو پاکستان کے تمام افسران کے دماغ درست ہو گئے تھے اور وہ سیدھے راستے پر آ گئے تھے اگر ابھی بھی حکومت کا ایک ذمہ وار افسر پی ٹی سی ایل کے تمام دفاترز کو اچانک چھاپہ لگا کر اچھی طرح چیک کرے اور اس کے نا اہل افران کو فارغ کرے تو شاید پی ٹی سی ایل کا دفتری نطام درست ہو جائے مگر دلی ابھی دور ہے اور پی ٹی سی ایل کا دفتری نطام اس وقت تک درست نہیں ہو سکتا ہے جب تک اس کے محکمے کے نا اہل افسران کے خلاف سخت ترین کارروائی نہیں ہو گی مجھے امید ہے کہ ہماری مسلم لیگ حکومت پی ٹی سی ایل کا قبلہ ضرور درست کرے گی

    آپ کا پی ٹی سی ایل کا ایک مظلوم صارف
    راجہ غضنفر علی خان
    مکان نمبر۔٥، استریٹ نمبر ١٠، اقبال ٹائون ، راولپنڈی
    تاریخ ٢٥ اگست ٢٠١٥
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

    راجہ غضنفر علی خان کا تعارف
    ۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔۔

    راجہ غضنفر علی خان آددوالیہ پاکستان کا ایک ٧٥ سالہ ضعیف العمر ایماندار،سچا، زندہ ضمیر، محب وطن، حق گو اور ایک اچھےا پاکستانی شہری ہیں جس نے پاکستان بنتے دیکھا ہے اور پاکستان کی تاریخ بنتے دیکھی ہے اور اس ملک کے ظالم، تکبرپسند،بدعنوان،راشی سرکاری افسران،سیاست دانون غندہ گردی کرنے والے جرائم پیشہ لوگوں کا عبرت ناک انجام بھی دیکھا ہے ان کا تعلق ایک گڈ بلڈد فیملی سے ہے وہ ہمیشہ حق بات کرنے کے عادی ہیں وہ صرف خدا سے ڈرتا ہے مگر خدا کے سوا وہ اس ملک کے کسی بھی ظالم اور طاقتور افسر اور شخص سے نہیں ڈرتے ہیں کیونکہ قبرستان میں مظلوم اور ظالم افراد کی قبریں ایک جیسی ہوتی ہیں اوران قبروں میں ذرا سا بھی فرق نہیں ہو تا ہے

    راجہ غضنفر علی خان ایک اچھے مضمون نگار بھی ہیں اور وہ
    ١٩٥٦سے پاکستان کے تمام اخبارات و رسائل میں اچھے مضامین لکھتے چلے آرہے ہیں ان کے پاکستان کے تمام اخبارات و رسائل میں اصلاح معاشرہ کے بارے میں بہترین مضامین شائع ہو چکے ہیں

    راجہ غضنفر علی خان روزنامہ یاد گار سکھر میں ( نیا دن نئی بات ) کے عنوان سے مستقل کالم لکھتے رہے ہیںاور سکھر کے عوام ان کے کالم بڑے شوق سے پڑھتے تھے

    0 Votes

Post your comment